(کاموں کی تقسیم)


IMG-20210421-WA0012.jpgSource

(کاموں کی تقسیم)

ہر شخص کو زندگی بسر کرنے کے لئے خوراک، لباس، اور مکان کی ضرورت ہوتی ہے، لیکن ہر شخص وہ سب کے سب پیشے اور کام نہیں سیکھ سکتا، جن سے یہ ضروری چیزیں حاصل ہوتی ہیں۔

ہر آدمی کو لوہار، بڑھئی، کسان، چمار، درزی اور معمار ان سب کا پیشہ اختیار کرنا دشوار ہے، اسی واسطے ہر شخص اپنی پسند کے موافق ایک پیشہ اختیار کرتا ہے۔

کوئی شخص لوہار کا کام کرتا ہے، لوہے کے اوزار ہتھیار یا برتن بناتا ہے، کوئی وکیل ہے جو قانون کے موافق حاکم سے انصاف چاہتا ہے۔

کوئی طبیب ہے جو بیماریوں کو پہچانتا، اور اُن کا علاج کرتا ہے، کوئی سپاہی ہے جو ہتھیار باندھ کر غنیم کا مقابلہ کرتا ہے۔

جب کوئی آدمی ایک ہی قسم کا کام یہ پیشہ کرتا رہتا ہے تو رفتہ رفتہ وہ بڑا ہنرمند اور استاد بن سکتا ہے۔

وہ اپنی دانائی اور مہارت سے اس کام کو زیادہ مفید بنا سکتا ہے، اور اس کے انجام دینے کا بہتر طریقہ ایجاد کر سکتا ہے۔

کاموں کی تقسیم سے انسانی گروہ کو بڑا فائدہ پہنچتا ہے۔

یہ تقسیم نہ ہوتی تو کوئی پیشہ اور ہنر ترقّی نہ پاتا بلکہ ہر کام بیکار اور دیر میں ہوتا۔

جزاک اللّہ


Comments 0